مفتی حسام اللہ شریفی نے مکتب دیوبند اور حنفی مسلک کو سلسلہ حق کا نمونہ بنایا ہے۔ارشاد نقوی

830
0

ستمبر کے پہلے عشرے میں 10 ستمبر 2016ء کو انشاء اللہ نئی تصنیف ’’تین طلاق کی درست تعبیر‘‘ منظر عام پر آجائے گی۔ علماء اور مفتیان حضرات اس کو غور سے پڑھیں اور ضد ، انا اور ہٹ دھرمی کا مظاہرہ انکے اپنے حق میں بہتر نہ ہوگا۔ غلط فہمی میں فتویٰ دینا اور بات ہے اور حق واضح ہوجانے کے بعد ضد پر ڈٹ جانا بالکل ہی الگ بات ہے ، ہمارے دل میں علماء کرام اور مفتیان عظام کیلئے بھی بہت احترام ہے ۔ مفتی حسام اللہ شریفی مدظلہ العالی نے دنیا بھر میں طلاق کے حوالے سے مروجہ فقہی مسائل کے مطابق جوابات دئیے لیکن انہوں نے حق کے مقابلے میں اپنی دیرینہ کاوشوں کو انا کا مسئلہ نہیں بنایا۔ یہی علماء حق کی زبردست نشانی ہے ، علماء دیوبند کے اس سرخیل کے علاوہ بریلوی مکتب ، اہلحدیث اور اہل تشیع کے نامور علماء کی طرف سے بھی اپنے مؤقف پر ایسے واضح تبدیلی کے فیصلے پر اہل حق ہی کا اطلاق ہوگا۔ مفتی حسام اللہ شریفی نے مکتب دیوبند اور حنفی مسلک کو سلسلہ حق کا نمونہ بنایا ہے۔ دوسرے مکاتب فکر کے چھوٹے بڑے علماء بھی تائید کررہے ہیں اور انشاء اللہ عنقریب سارے مکاتب فکر کے مشاہیر علماء اتفاق کرینگے۔ ارشاد نقوی