بڑے بڑے مدارس اللہ کے ہاں کیا جواب دینگے؟ مولانا اسد حجازی فاضل جامعہ بنوری ٹاؤن

کراچی (صدیق) مولانا ابواسد محمد حجازی فاضل جامعہ بنوری ٹاؤن، خطیب و امام جامع مسجد اللہ والی ریکسر بڑا بورڈ کراچی نے اپنے بیان میں کہا کہ یوم خواتین کے موقع پر خواتین نے بیہودہ پوسٹر اٹھائے ہوئے تھے۔ یہ علماء کرام کیلئے لمحہ فکریہ ہے کیونکہ علماء پر بڑی ذمہ داری ہے عالِم عالم کیلئے ہوتا ہے صرف عبادات ہی دین نہیں ہے بلکہ یہ تو چوتھائی حصہ ہے تین حصہ تو معاملات ہیں۔ جس نے بھی قرآن پر عمل کیا اللہ نے اسے معزز بنادیا اور جس نے قرآن پر عمل کرنا چھوڑا وہ ذلیل و خوار ہوئے۔ مدینہ کی ریاست دو طرح کی تھیں ایک وہ ریاست تھی جہاں یہود کے مفادات کی بات ہوتی تھی اور ایک وہ ریاست تھی جہاں مسلمانوں کے مفادات کی بات ہوتی تھی اب ہم خود فیصلہ کریں کون سی مدینہ کی ریاست بنانے کا نعرہ لگایا تھا مہنگائی اور ٹیکس، گیس بجلی کے بلوں نے عوام کو فاقہ کشی تک پہنچادیا ہے۔ بڑے بڑے مدارس والوں کو عوام کی کوئی فکر ہی نہیں ہے۔ اللہ کے ہاں کیا جواب دیں گے۔ سید عتیق الرحمن گیلانی ایک عرصہ سے طلاق حلالہ اور رجوع کو قرآن و حدیث کی روشنی میں بیان کررہے ہیں۔ الحمد للہ نوشتہ دیوار اخبار کے ذریعے معلوم ہوتا ہے بہت لوگوں کو فائدہ پہنچ رہا ہے۔ اگر کسی مدرسے والے کو اعتراض ہو آپ کی تحریر و تقاریر اگر خلاف قرآن ہوں تو براہ کرم وضاحت فرمائیں تاکہ ہماری بھی اصلاح ہو۔ ورنہ حق بات کو چھپانا بہت بڑا گناہ ہے۔ اور خلاف قرآن و حدیث ہے۔ اخبار کا اداریہ ضرور پڑھیں تاکہ ہمارے علم میں اور عمل میں اضافہ ہو۔ شاہ صاحب کی ہمت کو سلام شاہ صاحب نے جرأت کے ساتھ سخت حالات میں قرآن و حدیث کی روشنی میں فتنوں اور فرقہ واریت اور حلالہ کا مقابلہ کیا۔ جو لوگ اپنی غلط بات سے رجوع کرلیتے ہیں وہ اللہ کی نگاہ میں معزز ہوجاتے ہیں۔ دنیا کی عزت عارضی ہے جبکہ آخرت کی عزت ہمیشہ ہمیشہ کی ہے ابھی بھی وقت ہے کہ ہم حق کا ساتھ دیں اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ اہل بیت کی برکت کے صدقے امت مسلمہ پر رحم فرمائے۔ آمین۔

اپنا تبصرہ بھیجیں