ممبئی حملہ امریکہ سی آئی اے اسرائیلی موساد اور بھارتی را کی سازش تھی. عبد القدوس بلوچ

607
0

mumbai-attack-26-11-elias-davidsson-books-american-cia-israeli-mossad-indian-raw-agent-dawn-leaks-masood-azhar

جمعیت اعلاء کلمۃ الحق پاکستان AKHکے نومنتخب امیر عبدالقدوس بلوچ نے اپنے بیان میں اس بات پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ جب ممبئی حملہ امریکی CIA، اسرائیلی موساد اور بھارتی را نے کروایا تھا تو اس کا ملبہ پاکستان پر ڈالنا بڑی گھناؤنی سازش ہے۔ یہ بڑا عجیب ڈرامہ ہے کہ نوازشریف اپنے مؤقف پر ڈٹا ہواہے اور ن لیگ کہتی ہے کہ ہمارا کم عقل قائد درست کہتا ہے لیکن اسکا مؤقف پیش کرنیوالا میڈیا بڑا مجرم ہے۔ یہ انوکھاتضاد حکمران پارٹی کا مؤقف ہے۔جو یہ کہتے ہیں کہ پاکستان نے حملہ کیا ہے یا نہیں کیا ہے؟اور یہ قومی راز ہے تو حقائق پر ڈالنے والوں کو استعال کیا جارہا ہے اورجب باؤ لا ڈونلڈ ٹرمپ پاکستان پر حملہ آور ہوگا تو افغانستان، عراق، لیبیا کے بعد یہ سب سے بڑا ہدف ہوگا۔ قرضوں کے انبار نے اپنی معیشت کا ستیاناس کردیا ہے۔ سیاستدان بھی لوٹوں سے مسلم شاور بنتے جارہے ہیں۔ پاک فوج بھی جال میں پھنس رہی ہے۔ عوام نے بھی 70سالوں میں دھوکے ہی دھوکے دیکھے ہیں ۔ہر شاخ پر اُلو بیٹھا ہے ،انجام گلستان کیا ہوگا؟، پاکستان کیلئے افراد کی قربانی دینی ہوگی اورحقائق سے پردے اٹھانے ہونگے۔ ورنہ خدانخواستہ کچھ بھی نہ بچے گا۔
ڈان لیکس کے حوالے سے حقائق قوم کے سامنے آجاتے تو آج مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑتا۔ پنجاب میں کالعدم تنظیموں کا تعلق کس سے ہے؟۔ مولانا مسعود ازہر نے کہا تھا کہ انڈیا ایک بزرگ کے کہنے سے گیا تھا جو سعودیہ میں ملا تھا۔ تہاڑ جیل سے جو آزادی مولانا مسعود ازہر کو ملی تھی ، اتنی آزادی پاکستان میں بھی اسکوحاصل نہیں۔ ہفت روزہ ضرب مؤمن میں تازہ احوال پر لمبے لمبے خطبات شائع ہوتے تھے۔ 12سرنگیں جیل میں ہی کھودی گئیں تھیں جن میں مولانا کے سائز کی بھی ایک سرنگ تھی اور مولانا ازہر نے نئی جماعت بنانے کا اعلان کیا تو اسامہ بن لادن نے انکے 40 کارکن اپنے ذاتی بارڈی گارڈ کے طورپر قبول کئے تھے جو تقاریر اور میڈیا کی زینت بن گئے۔ پرویز مشرف جب مولانا مسعود ازہر کو ٹھیک بھی نہیں سمجھ رہا تھا تو کیا وجہ تھی کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو امریکہ نے مانگا لیکن مولانا ازہر اور حافظ سعید کو نہیں مانگا تھا؟۔ پرویزمشرف کے دور میں مولانا فضل الرحمن کو کشمیر کمیٹی کا چیئرمین بنایاگیا تھا اور شیخ رشید میڈیا پربرملا کہتا تھا کہ ’’ کشمیری مجاہدین سے مقبوضہ کشمیر کے عوام بیزار ہیں اسلئے ان پر پابندیاں عائد کی گئیں ہیں‘‘۔ گارگل میں پہلی مرتبہ پاک فوج نے بھارت سے سیاچن و بنگلہ دیش کا بدلہ اتارنے کی کوشش کی ۔ کرنل شیر خان کو نشانِ حیدر بھی دیا گیا۔ مقبوضہ کشمیر کو پاکستان کے نقشے میں ہم اپنے بدن کا لازمی جزؤ سمجھتے ہیں۔ پرویزمشرف پر بھی قاتلانہ حملوں میں کالعدم تنظیموں کے کارکن اور فوج کے آن ڈیوٹی سپاہی ملوث تھے۔
امریکی سی آئی اے نے اپنے تیار کردہ پود کے ذریعے سے جو ممبئی حملہ کروایا تھا، اس میں اسرائیلی موساد اور بھارتی را شامل تھے۔ جرمن اور بھارتی صحافیوں کی تیار کردہ رپورٹوں میں اس کا بھرپور انکشاف ہے لیکن ہمارے حکمران ، سیاستدان حقائق بتانے سے ڈرتے ہیں۔ حامد میرنے ایڈیٹرروزنامہ اوصاف کی حیثیت سے انکشاف کیا تھا کہ مفتی نظام الدین شامزئی نے یہ کہا کہ’’ کچھ جہادی تنظیمیں واشنگٹن سے رابطہ عالم اسلامہ مکہ کے ذریعے پیسہ لاکر علماء کرام کو خرید رہی ہیں اگر وہ اپنی حرکتوں سے باز نہیں آئے تو ان کا بھانڈہ بیچ چوہرائے پھوڑ دوں گا‘‘۔
نوازشریف نے اسامہ بن لادن سے بھی پیسے لئے تھے اور ایٹمی دھماکے نہ کرنے کیلئے بھی 5ارب ڈالر کی پیشکش برائے فروخت نوازشریف کو ہوئی تھی مگر قوم کو بے خبر رکھا گیا تھا۔ ڈان لیکس میں خبر کو غلط رنگ دینے پر پاک فوج ناراض تھی۔ شہباز شریف نے غصہ کرنے اور ڈانٹنے کی جھوٹی ہمت نہیں کی تھی مگر اس بات پر تبادلۂ خیال ہوا تھا کہ پنجاب میں کالعدم تنظیموں کی بیخ کنی میں کوئی رکاوٹ نہیں۔ فوج نے کہا تھا کہ ہماری طرف سے کوئی رکاوٹ نہیں، یہ سول حکومت کا کام ہے۔جھوٹی بھڑک بازی کی خبر ڈان لیکس میں شائع ہونے پر فوج ناراض ہوگئی تھی اور نوشتۂ دیوار میں اس وقت پورے حقائق سامنے آئے تھے۔
ممبئی حملے کے دہشتگردوں کومودی نے ٹھکانہ دیا،سعودی عرب سے اہتمام کیا گیا۔ پاکستان مکمل تعاون کیلئے تیار تھا مگر بھارت نے کوئی تعاون نہ کیا۔ امریکی CIAکا نام لینا مشکل تھا، ملبہ پاکستان پر ڈالنے کی سازش ہے۔ جیو، جنگ اور دیگر میڈیا چینل و اخبارات حقائق کو سامنے لانے سے ڈرتے ہیں یا اس سازش کا حصہ ہیں؟۔حافظ سعید اور مولانا ازہر ڈاکٹر عافیہ کی قربانی سے نہیں شرمائے تو ملک کی خاطر قربانی دے دیں۔