پوسٹ تلاش کریں

عمران کا نکاح عدت میں نہیں مگر علماء و مفتیان عدت میں نکاح تڑوا کر عورتوںکی عزتیں لوٹتے ہیں۔ مولانا فضل الرحمن اور علماء کرام فیصلہ کریں!

عمران کا نکاح عدت میں نہیں مگر علماء و مفتیان عدت میں نکاح تڑوا کر عورتوںکی  عزتیں لوٹتے ہیں۔  مولانا فضل الرحمن اور علماء کرام فیصلہ کریں! اخبار: نوشتہ دیوار

عمران کا نکاح عدت میں نہیں مگر علماء و مفتیان عدت میں نکاح تڑوا کر عورتوںکی
عزتیں لوٹتے ہیں۔ مولانا فضل الرحمن اور علماء کرام فیصلہ کریں!

یتیم بچیوں کو ہراساں…جنسی استعمال…بنی گالہ میں کالے جادو میں ذبح کی بدلتی ہوئی کہا نی :افشاء لطیف کی زبانی

واذ انجینٰکم من اٰل فرعون یسومونکم سو ء العذاب یذ بحون ابنآء کم و یستحیون نساء کم و ذالکم بلآء من ربکم عظیم O اور جب ہم نے آل فرعون سے نجات دی جو تمہیں برا عذاب دیتے۔ذبح کرتے تمہارے بیٹوں کو اور عورتوں کو زندہ چھوڑتے تھے اور اس میں تمہاری بہت بڑی آزمائش تھی تمہارے رب کی طرف سے ۔(البقرہ:49) قارئین کچھ سمجھے!۔ بنی اسرائیل کوعذاب آل فرعون دیتا تھا مگر آزمائش ربّ کی طرف سے کیوں تھی؟۔
بنی اسرائیل کایوسف سے کردار؟ جو بچہ فرعون سے بچتا تو خضر قتل کرتا کہ اپنے مؤمن والدین کو کفر وسرکشی میں نہ ڈالے۔ جس کی وجہ سے موسیٰ نے قبطی کو قتل کیا وہی غلط نکلا۔ دشمن قوم کا شخص اچھا نکلا۔ موسیٰ سے کہاگیا :”آپ اور آپ کا رب لڑو، ہم یہاںبیٹھے ہیں”۔نجأت مل گئی توہارون ساتھ تھا لیکن بچھڑا معبود بنادیا۔
امریکیCIA،جنرل اختر عبدالرحمن، حمیدگل ، مشرف نے فرعونی قتل کیامگر کوٹکئی وزیرستان کے شریف انسان خاندان ملک کا کیا گناہ تھا کہ قاری حسین و حکیم اللہ محسود نے انکی فیملی کے7افراد کو شہید کیا ؟۔PTMکے غیرتمندنوجوان اپنی قوم کو حلالہ کی بے غیرتی سے بچانے میں آج ہمارا ساتھ کیوں نہیں دیتے؟۔
صدرجمعیت علماء ہند مولاناحسین احمد مدنی نے کہاکہ” روحانی فیصلہ پاکستان کے حق میں ہوچکا مگر ہندوکیساتھ اپنا وطن بنائیں گے”۔جس پر علامہ اقبال نے ابولہب قرار دیا۔ بشریٰ بی بی نے قرآنی عدت ایلائ4ماہ ،حدیث کی عدت خلع حیض گزاردی۔ توروحانی حکم پر اسکے نکاح سے اسلام کی نشاة ثانیہ کا آغاز ہوگا۔ مولانا فضل الرحمن، محمود اچکزئی اور علماء کرام فیصلہ کرسکتے ہیں۔
علماء نے لکھا کہ ”اولیاء میں مجدد الف ثانی کو خلافت دینے پر جھگڑاہواتو نبی ۖ نے فیصلہ فرمایا کہ سبھی خلافت دیں۔ابوبکر کے سلسلہ نقشبندیہ میں بیعت ہوگی مگر چشتیہ، قادریہ اور سہروردیہ کی خلافت بھی ہو گی۔ جن کا سلسلہ علی سے رسول ۖ تک پہنچتا ہے”۔( جمعیت علماء ہند کا شاندار ماضی: مصنف مولانا سید محمدمیاں)
شیخ احمد سرہندی المعروف مجدد الف ثانی نے اپنی مکتوبات میں لکھ دیاہے کہ ”روحانیت کا اصل منبع ومرکز علی اورفاطمہ ہیں ۔ حسنو حسین ساتھ ہیں ۔ روحانی معاملہ علی و حسین کی رہنمائی میں چلتا ہے، وہ اولیاء کی مدد کرتے ہیں”۔ مجدد کے اس مکتوب کا حوالہ” اتحاد امت” کتاب کے سید خورشید علی وارثی نے دیا ۔ جس کی تائید مفتی اعظم پاکستان مفتی ولی حسن ٹونکی ، بریلوی، اہلحدیث اور شیعہ علماء نے کی۔ پیر صابر شاہ پختونخواہ کے وزیراعلیٰ تھے تو خورشید وارثی کیساتھ ہماری ملاقات ہوئی۔ پیر صابر شاہ اتحاد امت ہزارہ کے سیکرٹری نشرواشاعت رہے ۔ انجینئر محمد علی مرزا نے علماء کو قادیانیوں کی صف میں کھڑا کیا۔ مرزا سمجھتاہے کہ مرزا قادیانی جس روحانی حکم پردعویٰ نبوت سے کافر ٹھہرا۔ مجدد مکتوب اور علماء دیوبند اپنی کتابوں میں کفر کے مرتکب بن گئے۔ پرویزبھی علماء وصوفیاء اور قادیانیوں کو ایک سمجھتا تھا۔ پرویز حدیث کا منکر تھا مگر قرآن میں خضر کی تأویل کرتا تھا۔ انجینئر احادیث کو مانتا ہے۔ دیوبندی مسعود عثمانی، حزب اللہ ، طاہر پنج پیری، مفتی منیرشاکر اور اہلحدیث سے الگ جماعت المسلمین کا تقریباً ملتا جلتا حال ہے۔
شیخ سرہندی و شاہ ولی اللہ شریعت و تصوف مانتے تھے۔ بریلوی ، دیوبندی اور اہلحدیث ان شخصیات کو مانتے ہیں۔ عون چوہدری نے بتایا کہ عمران خان کیساتھ روحانی حکم پر عدت میں نکاح ہوا تھا۔ شیعوں نے روحانی حکم پر سمندر میں چھلانگ لگائی تھی۔ علامہ جواد نقوی شیعوں کونصیری و مشرک کہتا ہے ۔ شیعہ ان کو یزید سے بدترکہتے ہیں۔ عمران خان کی تائید میں انجینئر مرزا، مفتی منیر شاکر اور علامہ کوکب نورانی وغیرہ شیعہ ، سنی ، دیوبندی ، بریلوی ،اہلحدیث ایک تھے۔
ڈاکٹر طاہرالقادری کے روحانی احکام کا چرچا ہوا۔ مولانا احمد رضا بریلوی کی وجہ سے اکابر دیوبند نے تقلید کو بدعت کہنا چھوڑا ۔ حالانکہ شاہ اسماعیل شہید نے اپنی کتاب ”بدعت کی حقیقت ” میں تقلید کو چوتھی صدی ہجری کی بدعت قرار دیا تھا اور اسکے اردو ترجمہ پر علامہ سید یوسف بنوری نے تائیدی تقریظ لکھی ۔ مفتی اعظم ہند مفتی کفایت اللہ نے سنت نمازوں کے بعد اجتماعی دعا کو بدعت قرار دیا مگر علماء دیوبند خیبرپختونخواہ، اندورن سندھ، بلوچستان اور افغانستان میں سنت کے بعد اجتماعی دعا کو بدعت کہنے والے پنج پیری دیوبندی پر قادیانیت کا فتویٰ لگاتے۔
علامہ طاہرالقادری نے بریلوی سے نفرت نکالی۔ اگر مولانا احمد رضا کا فتویٰ مانا جاتا کہ دیوبندی ، قادیانی، شیعہ ، وہابی کافر ہیں تو بریلوی قادیانیوں کی طرح تنہاء رہ جاتے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے ڈاکٹر اسرار احمد کے پروگرام میں منہاج القرآن وزٹ کی دعوت دی اور بتایاکہ ”میں نے اتحاد کیلئے200افراد کولندن آنے جانے کا ٹکٹ اور خرچہ دیا مگر کامیاب نہ ہوسکا۔ آپ محنت کریں لیکن میں مایوس ہوں”۔ طاہرالقادری نے ویڈیو میں کہا تھا کہ ” طوفان سب کو بہاتا ہے اور مجھے بھی بہالیتا ہے مگر ایک شخص کھڑا رہتا ہے اور نہیں جانتا ہوں کہ کون ہے؟ ”۔ مولانا محمد امیر بجلی گھر نے مجھ سے کہا کہ ” آپ جوان ہو، جوانی کا خون جوش کرتا ہے۔ کوشش کرومگر مولانا فضل الرحمن اور مولانا سمیع الحق کو متحد نہیں کرسکتے ہیں”۔ مولانا بجلی گھر نے جلسہ عام میں یہ بھی کہا تھا کہ ” عراق کی پیٹھ پر صدام حسین نہیں شیخ عبدالقادر جیلانی لڑ رہاہے جس کا مقابلہ امریکہ نہیں کرسکتا ہے ”۔
یتیم خانہ کاشانہ لاہور کی سپرنٹنڈٹ افشاء لطیف کے مختلف ادوار کی ویڈیوز ہیں۔ ایک یتیم بچی اقراء کائنات نے الزام لگایا کہ افشاء نے زبردستی شادی کرائی اور بعد میں اس کی موت واقع ہوئی۔ افشاء لطیف نے بتایا کہ اقراء کی مرضی سے شادی کرائی تھی۔ اس سے پہلے25لڑکیوں کا نکاح ہواتھا جن کا کوئی ریکارڈ نہیں ہے۔ ایک گارڈ پر یتیم خانہ کی بچیوں کو ہراساں کرنے کا الزام بھی لگایاتھا ، جس کی بقول افشاء کےCCٹی وی ویڈیو بھی ہے۔ افشاء کی طرف سے3ماہ پہلے جو وڈیو بنائی گئی تو اس میں یتیم بچیوں کوباقاعدہ جنسی طور پر استعمال کرنے کیلئے تیار کرنے کابڑا الزام تھا ۔جو پہلے کے بیان اور باڈی لینگویج سے مختلف تھا۔ اب معاملہ یہاں تک پہنچا یا کہ شہباز شریف نے جھوٹ بولا تھا کہ بنی گالہ میں منوںمرغیوں کا گوشت ڈالا گیا۔ یتیم بچیوں کا گوشت جادو میں استعمال ہوا ۔صحافی احمد نورانی نے ٹھیک تجویز دی کہ چیف جسٹس فائزعیسیٰ سزا دیدے۔
عمران خان کے حمایتی طبقے کا حال یہ ہے کہ اگر ثابت ہوجائے کہ واقعی اس طرح بچیوں کو ذبح کیا گیا ہے تو بھی کہیں گے کہ فوج کی باتوں میں آگئے تھے اور صحابہ کرام نے بھی بچیوں کو زندہ دفن کیا تھا اور ہندہ نے امیر حمزہ کا کلیجہ چبایا تھا۔ دوسری طرف نوازشریف سے بھاڑہ ملتا ہے تووہ بھی ایک سے بڑھ کر ایک گھناؤنا الزام ثابت ہونے کے باوجود اپنا مشن جاری رکھیں گے۔ جن کا نقصان بہرحال فوج کو ہورہاہے کہ اگر ایسی برائی تھی تو پیچھے کون تھا اور ہے تو پیچھے کون ہے؟۔ مریم نواز نے کہا کہ” میرے پاس آن ڈیوٹی لوگوں کی خطرناک ویڈیوز ہیں”۔ عورت کی پیشکش سے حضرت یوسف بھی اللہ کی مدد سے ہی بچ سکے تھے۔کیپٹن صفدر نے بھی ویڈیوز کا چیلنج دیاتھا۔تحریک انصاف کے ایک رہنماکی ویڈیو سوشل میڈیا پر جاری ہوئی تھی۔ خدا جانے قوم کا آخری انجام کیا ہونے والا ہے؟۔
محمود خان اچکزئی ، مولانا فضل الرحمن، نوازشریف اور علماء ومفتیان بشریٰ کے روحانی حکم پر نکاح کا جائزہ لیں۔اگر اسکی وجہ سے قرآن کی عدتِ ایلاء اور حدیث کی عدتِ خلع کی سنت زندہ ہوتی ہے تویہ اسلام کی نشاة ثانیہ کا ذریعہ ہوگا اور الیکشن سے پہلے عوام اور اداروں کیلئے افہام وتفہیم کی بہترین فضاء پیدا ہوگی۔
اقبالنے کہا: علماء کا بڑااحسان کہ دین پہنچادیا مگر اللہ ، جبریل اور نبیۖ حیران ہیں کہ کیا یہ وہی دین ہے؟۔ عدت میں نکاح قائم رہتا ہے ۔ قرآن میں بار بار رجوع کی اجازت واضح ہے مگر فتویٰ دیاجاتاہے کہ نکاح قائم نہیں رہا اور حلالہ کی لعنت سے عورتوں کی عزت لٹواکر اسلام اور مسلمانوں کا بیڑہ غرق کردیا۔

نوٹ: مکمل تفصیلات جاننے کیلئے اس کے بعد عنوان ” بشریٰ بی بی قرآن وسنت کی دوعدتیں گزار چکی تھیں ”
اور ”خلع میں عدالت و مذہبی طبقے کا قرآن وسنت سے انحراف؟”کے تحت آرٹیکل پڑھیں۔

اخبار نوشتہ دیوار کراچی،شمارہ دسمبر2023
www.zarbehaq.com
www.zarbehaq.tv
Youtube Channel: Zarbehaq tv

اس پوسٹ کو شئیر کریں.

لوگوں کی راۓ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

مولانا فضل الرحمن کو حقائق کے مفید مشورے
حکومت وریاستIMFسے قرضہ لینے کے بجائے بیرون ملک لوٹ ماراثاثہ جات کو بیچے
ملک کا سیاسی استحکام معاشی استحکام سے وابستہ ہے لیکن سیاسی پھنے خان نہیں سمجھ سکتے ہیں؟