پوسٹ تلاش کریں

قوم جانتی ہے کہ پاک فوج اور اس کا جرنیل کیا چیز ہے؟ ڈاکٹر اثر الاسلام سید

قوم جانتی ہے کہ پاک فوج اور اس کا جرنیل کیا چیز ہے؟ ڈاکٹر اثر الاسلام سید اخبار: نوشتہ دیوار

قوم جانتی ہے کہ پاک فوج اور اس کا جرنیل کیا چیز ہے؟ ڈاکٹر اثر الاسلام سید

جنرل ندیم انجم اور جنرل بابر افتخار کیا خوبصورت ہیں اور کس نرم لہجے میں بات کرتے ہیں!

ان بیچاری لڑکیوں کا قصور نہیں ہے ان کواسٹیج شو چاہیے اور عمران خان کورنگ رچانا آتا ہے!

عمران خان کیا جانے کہ ایک بہادر جرنیل کیا ہوتا ہے ۔ اثر الاسلام سید
DGISPRصاحب میں ان کو سلام پیش کرتا ہوں اور عرض کرتا ہوں کہ خدا کے واسطے آپ پلیز
do not feel tense
مت سمجھئے کہ آپ یکہ و تنہا ہیں پوری قوم آپ کیساتھ ہے اسلئے کہ قوم جانتی ہے کہ پاک فوج کیا ہے اور پاک فوج کا جرنیل کیا چیز ہوتا ہے۔ کتنے پراسیس سے گزر کر جرنیل بنتا ہے۔ میں کیڈٹ کالج حسن ابدال کا پراڈکٹ ہوں۔ میں نے وہاں تعلیم حاصل کی۔ حب الوطنی میں نے وہاں سے سیکھی اور میرے ساتھی جو ہیں میں جانتا ہوں کہ ان میں سے جوجو جرنیل بنے کیسے کیسے چنیدہ قسم کے وہ نوجوان تھے۔ میرے کلاس فیلوز میں سے چار جرنیل ہیں۔ تو یہ جو ہمارے جرنیل ہیں جن کی تضحیک کی گئی اور ان کو ایسے ایسے یعنی ایک آدمی انکے خلاف بولنا توہین آمیز لفظ یعنی ان کو کبھی اندازہ نہیں ہے عمران خان کو یا اسکے چو چوں کو کبھی زندگی میں ایک دن بنکر میں بارڈرپر بیٹھ کر دیکھو !۔میں نے1971کی وار میں ایک دن گزارا تھا فاضلکا کے بارڈر کے بینکر میں۔ میرے باپ نے کہا تھا کہ یہاں رہ تاکہ تجھے پتہ لگے یہ زندگی کیا ہے۔ اس وقت میں میڈیکل اسٹوڈنٹ تھا۔ جنگ کا زمانہ تھا ادھر سامنے انڈین آرمی اور یہ سارا کچھ، تو ایک دن میں ایسا تھا کہ سپاہی مجھے کہہ رہا ہے کہ سر نیچا کرو سر نیچا کرواور میں نے کہا کہ یہ کیا حکم دے رہا ہے ۔ اس نے دیکھا کہ ادھر سامنے ایک گن موو کررہی ہے اور پچاس گز کا بھی فاصلہ نہیں۔ ذرا سا یہاں سے سر کوئی اٹھے تو ہم اس پر فائر کریں۔ وہاں تو71کی وار کے بعد جو صورتحال تھی ۔ ان لوگوں کو اندازہ نہیں، ہمارے سپاہی جوان روٹی کئی کئی دن وہاں نہیں کھائی ہوتی ان کو اندازہ نہیں کہ ان کی عزت کیسے کرنی ہے۔ ہمارے بزرگ غلام احمد پرویز نے ایک بات لکھی ہے کہ65کی وار میں وہ بارڈ ر کے اوپر گئے تو انہوں نے دیکھا ایسے ہی جیسے میں گیا تو71میں ، کہتے ہیں سپاہی میں نے دیکھا تو میں نے اس سے پوچھا کہ کچھ کھاندے پیندے وی ہو تو سپاہی نے آگے سے جواب دیا کھاڑاں کھانا تو ویلوں دے کم ہیں۔ یعنی یہ سپاہی جو خالی پیٹ بینکروں میں بیٹھتا ہے آپ کبھی اس کا راشن دیکھیں وہ جو دال کی مٹھیاں کھا رہا ہے اس کی زندگی دیکھیں۔ کس طریقے سے وہ پاکستان کا پہرہ دے رہا ہے اور یہ چند لفنگے گپتے بے شرم لوگ جن کو اپنی ماں باپ کی عزت بھی نہ آئی یہ جو یوتھیا مخلوق ہے یہ جو سڑک پر اس کو پتا ہے ان بیچاری لڑکیوں کا قصور نہیں۔ ان کو ایک شو اسٹیج چاہیے ایک اسٹیج پر آنے کیلئے خان صاحب کو یہ رنگ رچانا آتا تھا، اس کیساتھ پورا ٹولہ سب سے بڑی بات یہ ہے
He has million of Dollars, He has money
اور آپ مجھے صرف اس کے پیسوں کا بتادیں جس کا نام سلمان اقبال ہے۔
He is Elon Musk of Pakistan
اتنی دولت والا آدمی ہے یہ جوARYچینل والا۔ ان لوگوں نے ایک مقصد کے تحت یہ مہم چلائی
Because the goal is to weaken Pakistan
پاکستان کو اس پوائنٹ پر لے آؤ کہ جب یہ لوگ ڈکٹیٹ کریں کہ ہمیں یہ چاہیے ہمیں وہ چاہیے یہ پاکستان آرمی کو بلیک میل کرسکیں ڈکٹیٹ کریں۔ جس بات کا بڑے ہی خوبصورت حسین انداز میں جنرل ندیم احمد انجم، اُف اتنے خوبصورت انسان ہیں اور اتنا شستہ اور اتنا حسین لب و لہجہ ہے ان کا یعنی مجھے اتنی خوشی ہوئی اور ان کے ساتھ جنرل بابر افتخار صاحب اتنی خوبصورتی سے انہوں نے ، اور میں کہتا ہوں عجز و انکساری کے ساتھ اللہ کی قسم یہاں پر اس جگہ کوئی تگڑا اس قسم کی پرسنیلٹی والے جرنیل بیٹھے ہوتے ناں جو بولنے نہیں دیتے تھے یہ تو انہوں نے ڈیلے کردی ، ڈیلے اسلئے کی کہ طول دینا ہے کہ دیکھتے ہیں کہ شاید اس انسان کو ہوش آجائے ، شاید اس کے اندر کوبھی کوئی حب الوطنی کا مادہ جاگے کہ دیکھو آرمی ہی نے تجھے چانس دیا تھا تو بڑا پھڑک رہا تھا اتنے سالوں سے کہ میں وزیر اعظم بن کر یہ کردوں گا وہ کردوں گا۔ آرمی اس کو لے کر آئی۔ انہوںنے خود کہا ہے کہ اس بارے میں تو شک کسی کو ہونا نہیں چاہیے ، اور اس کا تو میں خود ذاتی طور پر شاہد ہوں آپ کو یاد ہوگا اور جو لوگ میرے سننے والے ہیں کہ آرمی کے خلاف جتنا زیادہ میں بولا ہوں اس دور میں اتنا کوئی نہیں بولا۔ میری دیکھا دیکھی لوگوں نے بولنا شروع کیا۔ اسلئے کہ میں پرسنلی افیکٹڈ تھا۔ کیوں؟ کیونکہ میں نے ایک پیٹریاٹ حب الوطن انسان کی حیثیت سے جنت پاکستان پارٹی بنائی رجسٹرڈ کرائی۔ کینڈیڈیٹس کو فائی نینس کیا کہ جو جو ان کو تھوڑی بہت چیزیں چاہئیں انہوں نے آرمی کے لوگوں نے جو کنٹرول کررہے ہیں الیکشن کو میرا نام و نشان نہیں اٹھنے دیا۔ وہ نہیں چاہتے تھے کہ کوئی پیرالل پارٹی اٹھے اور عمران خان کے سوا لیڈر شپ آسکے۔ نام و نشان جنت پاکستان تحریک کا کس طریقے سے مٹایا گیا وہ سب اچھی طرح جانتے ہیں۔ جو نہیں جانتے وہ دیکھ لیں جاکر فیس بک پر پیجز، ویب سائٹ ، جب پارٹی لانچ کی گئی تو ہزاروں لائک تھے دس دن میں۔ اور اسکے بعد کیا ہوا؟ اسکے بعد ٹوٹل بلاک سینسر شپ کردی گئی۔ آرمی ہماری بڑے خلوص کیساتھ یہthoughtکہ
Imran Khan is the best
انہوں نے عمران خان کو لایا اب اس کا اقرار بھی کیا لیکن وہ کیا کہتے ہیں مولے نوں مولا ہی ماردا ہے۔ مجھے گلہ ہے آج جو بات ہورہی ہے کہ سارا کا سارا بیانیہ لفافہ امریکہ کا کاغذہلارہا تھا وہ سب ایک جھوٹ ایک ڈرامہ تھا۔ آج آرمی کے چیف نے یہ بات علی الاعلان کی ہے کاش اسی وقت اس کتے کا منہ توڑا جاتا۔ اسی وقت اس کتے کے منہ پر چنڈ ماری جاتی کہ سٹ ڈاؤن شٹ اپ۔ اس کو شٹ اپ کال دی جاتی کہ
You are a liar
تو جھوٹ بول رہا ہے۔

ڈاکٹر اثر الاسلام سید کے بیان پر تجزیہ
ڈاکٹر صاحب نے فوج کا بھرپور دفاع کیا ہے۔ حسن ابدال کیڈٹ کالج پاکستان کا قابلیت کے اعتبار سے پہلے نمبر کا ادارہ ہے۔ ایک اور بیان میں ڈاکٹر صاحب نے کہا ہے کہ مراسلہ کا مطلب رسالت ہے۔ امریکہ نے ایک مراسلہ بھیج دیا اور پورا سیاسی نظام بدل دیا۔ عمران خان کو کیا معلوم کہ امریکہ کتنا طاقتور ہے۔ جنرل ایوب نے زبردست کام کیا کہ امریکہ سے پاکستان کو جوڑ دیا۔
فوج کا بیانیہ اس قسم کے لوگ پیش کریں تو لوگوں پر کیا اثر پڑیگا؟۔ جنرل ایوب کے دور میں فاطمہ جناح ، مسلم لیگ فوج سے بدظن ہوگئی تو سرکارنے نئی نئی ناجائز مسلم لیگیںجنم دینی شروع کیں۔ جو پاکستان کے بانی کا دعویٰ کرتی ہیں۔ اللہ کرے ن لیگ اور ق لیگ آخری ہوں۔ عمران خان کو بھی اللہ ہدایت دے۔

www.zarbehaq.com
www.zarbehaq.tv
Youtube Channel: Zarbehaq tv

اس پوسٹ کو شئیر کریں.

لوگوں کی راۓ

  • M. Feroze Chhipa

    Excellent News Paper

  • Bilal

    اس کتاب سے بہت سے لوگوں کے گھر جڑیں گے

  • Mustafa

    میں آپ کی رائے سے متفق ہوں۔

  • Mustafa

    بہت اچھا آرٹیکل ہے، حکومت، عدلیہ او ر ریاست کو اس پر توجہ دینی چاہئے۔

  • شباب اکرام

    حقیقت یہی ہے کہ اغیار ہمیشہ امت مسلمہ سے ہی گبھراتی ہے۔۔۔تب ہی تو سب سے امت کا مرتبہ چھین کر صرف اور صرف عوام کے درجے تک گرا دیا۔۔۔ طویل مباحثہ وقت پانے پر پیش کرونگا مگر اس بے بس عوام کیلئے صرف ایک شعر آپکی خدمت میں ان کی فطری عکاسی کیلئے عرض کونگا۔۔ خدا کو بھول گئے لوگ فکرےروزی میں غالب۔۔ تلاش رزق کی ہے رازق کا خیال تک نہیں۔۔۔۔ بہت شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

مجھے یہ نہیں معلوم تھا کہ ریاست چھچھوری بھی ہوتی ہے۔ وسعت اللہ خان
سیاسی جماعتیں اپنی غلطیوں پر کم از کم معافی تومانگ لیں۔ سہیل وڑائچ
ایسٹ انڈیا کمپنی سے آج تک سلیکٹڈ و سلیکٹر کی سیاست۔ رضاربانی