پوسٹ تلاش کریں

صحافی جمہوریت کو ربڑ بینڈ سے باندھ کر سیاستدانوں کا گند ریٹائرڈ جنرل پر ڈال رہے ہیں ۔

صحافی جمہوریت کو ربڑ بینڈ سے باندھ کر سیاستدانوں کا گند ریٹائرڈ جنرل پر ڈال رہے ہیں ۔ اخبار: نوشتہ دیوار

صحافی جمہوریت کو ربڑ بینڈ سے باندھ کر سیاستدانوں کا گند ریٹائرڈ جنرل پر ڈال رہے ہیں ۔

نوازشریف نے پانامہ لیکس کے بعد پارلیمنٹ میں تحریری جھوٹ بولا، پھر عدالت میں قطری خط پیش کیا ، پھر اس سے مکر گیا، ایون فیلڈ لندن کے فلیٹ پرتو بے شرم کو سزا تک ہوچکی تھی

دھمکی خط میں مداخلت کا اعتراف اور سازش کا انکار تھا۔ توشہ خانہ کے مجرم صرف عمران خان نہیں بلکہ ایک لمبی فہرست ہے ،لاہور ہائیکوٹ کے حکم کے خلاف وفاقی حکومت نے اپیل کردی

1: پانامہ کا انکشاف ہوا تو نوازشریف نے جھوٹ بولا کہ2005میں سعودی اور دبئی مل بیچ کر 2006ء میں ایون فیلڈ کے فلیٹ خریدے۔2:حالانکہ ان فلیٹ پر پیپلزپارٹی نے1994میں کیس بنایا۔ پھر عدالت میں قطری خط پیش کیا گیا اور اس سے پھر لاتعلقی کا اظہار بھی کیا۔
نوازشریف کے سفید جھوٹ کو سچ ثابت کرنے والے صحافیوں کی بڑی تعداد الیکٹرانک اور سوشل میڈیا پر مسلسل پروپیگنڈہ کرتی نظرآتی ہے جس میںسارا ملبہ فوج پر گراتے ہیں، کیا ISIنے پارلیمنٹ میں سفید جھوٹ بولنے اور قطری خط لکھنے پر مجبور کیا تھا؟۔ یہ وضاحت کریں!۔
1:پہلے کیپٹن صفدر نے کہا تھا کہ ”ہم بلیک میل نہیں ہوںگے، جس کے پاس جو ویڈیو ہے وہ جاری کرے، ہمارے پاس بھی بہت کچھ ہے”۔
2: عمران خان کے حامی سوشل میڈیا پر کہتے ہیں مریم نواز کی جنرل قمر باجوہ کیساتھ ویڈیو ہے جس کی وجہ سے جنرل باجوہ بلیک میل ہورہاہے۔
عمران خان کیخلاف توشہ خانہ کیس ہے۔ لاہور ہائیکورٹ نے توشہ خانہ کا ریکارڈ عام کرنے کا حکم دیا تو وفاقی حکومت نے مخالف اپیل دائر کردی۔تحائف کو بیچنے اور استعمال کرنے کی قانون میں اجازت نہیں بلکہ عجائب گھر کی طرح رکھنا ہوتا ہے۔اس حمام میںسب ہی ننگے ہیں۔

___انقلابِ نوازشات دھوبی گھاٹ___
جسٹس شوکت عزیز اور جسٹس فائز عیسیٰ نے نوازشریف کے خلاف فوج اورISIکے دباؤ کا ذکر کیاتھا لیکن پھر جنرل قمر جاوید باجوہ کو لندن میں بیٹھ کر نوازشریف نے کیوں ایکسٹینشن دی تھی؟، کیا جاوید چوہدری یہ بتائیگا کہ اڈیالہ جیل میں شیو کا بلیڈ دکھا کر منے نوازشریف کو ڈرایا دھمکایا گیا کہ” اگر ایکسٹینشن نہیں دی تو تجھے ذبح کردینگے؟”۔ کیا جنرل راحیل شریف نے زبردستی سے پارلیمنٹ کے جھوٹے بیان پر مجبور کیا تھا؟۔کیا جنرل باجوہ نے مجبور کیا تھا کہ جھوٹاقطری خط لکھو اور پھر اس کا انکار کردو؟۔ عدالت نے اتنے بڑے بڑے جھوٹ پکڑنے کی جگہ اقامہ پر سزا دی تو اس سے بڑی اور کیا رعایت ہوسکتی تھی ؟۔ لیکن الیکٹرانک اور سوشل میڈیا پر تسلسل کیساتھ صحافیوں کی ایک بہت بڑی اور انتہائی جھوٹی ٹیم نوازشریف اور اسکے ٹبر کے کپڑے دھو دھو کر دھودھو کر دھو دھوکر اسکا سارا گند فوج اور جنرل باجوہ پر ڈال رہی ہے۔ کیا ان تمام صحافیوں نے کبھی نوازشریف اور اسکے ٹبر سے پوچھا ہے کہ پارلیمنٹ میں اتنا بڑا جھوٹ بولنے اور قطری خط لکھنے پر فوج نے مجبور کیا تھا؟۔ بکاؤ مال کا تسلسل کیساتھ ایک ہی بیانیہ قوم کے ذہن میں ڈالاجا رہا ہے کہ نوازشریف کیساتھ فوج نے بہت بڑا ظلم کیا اور اس کا یہ کہنا درست تھا کہ ”مجھے کیوں نکالا اور ووٹ کو عزت دو”۔ شرم سے ڈوب مرنا چاہیے!۔

___انقلاب ِعمرانیات دھوبی گھاٹ___
جو صحافی فوج اور جنرل قمر جاوید باجوہ کے ماموں، چچا اوربھتیجے بنے تھے اورعمران خان بیساکھی جہانگیر ترین اور علیم خان سے محروم ہوا ۔لوٹے کھوٹے ہو گئے ۔PDMبھی زرداری کیساتھ مل کر حکومت گرانے پر آمادہ ہوگئی تو عمران خان نے فوج کو کہاکہ مجھے کیوں گرایا یا پھر بچایا کیوں نہیں؟۔ جنرل باجوہ کو سب نے مل کر ایکسٹینشن دی ۔ جنرل آصف غفور نے مولانا فضل الرحمن کے دھرنے کے دوران کہا کہ فوج ہر حکومت کو سپورٹ کریگی جو جمہوری بنیاد پر اقتدار میں آئے۔ مہنگائی کی وجہ سے عوام تنگ تھی ۔ نوازشریف نے جنرلوں کے نام لیکر خوب تذلیل کی اور پیپلزپارٹی،ANPکو بہانہ بناکرPDMسے نکالا حالانکہPDMکا پہلا اجلاس پیپلزپارٹی نے بلایاتھا،جہاں مولانا فضل الرحمن نے غلط پرچی پڑھ کر سنانا شروع کی،ارشد شریف فوج کے پیچھے لگ کرانقلابی بن گئے، مولانا حق نواز جھنگوی نے عابدہ حسین کو نامزدکیا ۔ مولانا فضل الرحمن نے مولانا جھنگوی کا قاتل نواز شریف اورعابدہ حسین کو قرار دیاپھر نوازشریف اور سپاہ صحابہ نے ملکر بیگم عابدہ حسین ،مولانا ایثارالحق کو جھنگ سے مولانا فضل الرحمن کی مخالفت میں جتوایا تھا۔مولانا جھنگوی کے بیٹے کی پراسرار موت ہوئی ، اب دوسرے بیٹے کو جھنگ سے ٹکٹ بھی نہیں دیا جاتا اور اپنوں کی شدید مخالفت کا سامنا ہے۔

www.zarbehaq.com
www.zarbehaq.tv
Youtube Channel: Zarbehaq tv

اس پوسٹ کو شئیر کریں.

لوگوں کی راۓ

  • M. Feroze Chhipa

    Excellent News Paper

  • Bilal

    اس کتاب سے بہت سے لوگوں کے گھر جڑیں گے

  • Mustafa

    میں آپ کی رائے سے متفق ہوں۔

  • Mustafa

    بہت اچھا آرٹیکل ہے، حکومت، عدلیہ او ر ریاست کو اس پر توجہ دینی چاہئے۔

  • شباب اکرام

    حقیقت یہی ہے کہ اغیار ہمیشہ امت مسلمہ سے ہی گبھراتی ہے۔۔۔تب ہی تو سب سے امت کا مرتبہ چھین کر صرف اور صرف عوام کے درجے تک گرا دیا۔۔۔ طویل مباحثہ وقت پانے پر پیش کرونگا مگر اس بے بس عوام کیلئے صرف ایک شعر آپکی خدمت میں ان کی فطری عکاسی کیلئے عرض کونگا۔۔ خدا کو بھول گئے لوگ فکرےروزی میں غالب۔۔ تلاش رزق کی ہے رازق کا خیال تک نہیں۔۔۔۔ بہت شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

مجھے یہ نہیں معلوم تھا کہ ریاست چھچھوری بھی ہوتی ہے۔ وسعت اللہ خان
سیاسی جماعتیں اپنی غلطیوں پر کم از کم معافی تومانگ لیں۔ سہیل وڑائچ
ایسٹ انڈیا کمپنی سے آج تک سلیکٹڈ و سلیکٹر کی سیاست۔ رضاربانی