پوسٹ تلاش کریں

نظریہ صحیح اور نظام درست ہو تو ملک میں امن و امان اور خوشحالی کا دور دورہ ہوتاہے ۔پاکستان کا نظریہ لاالہ الا اللہ محمد رسول اللہ :نظام توبہ استغفراللہ ہے؟

نظریہ صحیح اور نظام درست ہو تو ملک میں امن و امان اور خوشحالی کا دور دورہ ہوتاہے ۔پاکستان کا نظریہ لاالہ الا اللہ محمد رسول اللہ :نظام توبہ استغفراللہ ہے؟ اخبار: نوشتہ دیوار

نظریہ صحیح اور نظام درست ہو تو ملک میں امن و امان اور خوشحالی کا دور دورہ ہوتاہے ۔پاکستان کا نظریہ لاالہ الا اللہ محمد رسول اللہ :نظام توبہ استغفراللہ ہے؟

نظریہ مضبوط، مستحکم اور ناقابلِ تسخیر ہوتا ہے تو لوگ بڑے مستقل مزاج ہوتے ہیںلیکن جب نظریہ منتشراورناپائیدار ہوتا ہے تو ملک میں افراتفری انتشار ہوتا ہے۔ مسلم قومیت کی جگہ یہاں منتشر اور متضادفرقے ہیں اوراسلامی نظام کی جگہ کٹھ پتلی جمہوریت ہے جس کی وجہ سے لسانیت ، فرقہ واریت اور فرعونیت ہے

تحریر: سید عتیق الرحمن گیلانی

پاکستان مسلم قومیت لاالہ الااللہ محمد رسول اللہ کے نام پر بنا لیکن کیا اسلام سے زیادہ مضبوط یہاں فرقہ واریت ، مسلک سازی اور گروہ بندی نہیں؟۔ جب اسلام کی جگہ بریلوی ،دیوبندی،اہلحدیث اور شیعہ نے لی ہے تو پھریہ اسلام ہے یا فرقہ واریت، تضادات اور انتشارات کا ملغوبہ ہے؟۔ سانحہ مشرقی پاکستان سقوطِ ڈھاکہ تک نوبت اسلئے پہنچی کہ سیاست کا محور مفادات کے تحفظ کا جھگڑا تھا اور بہاری اور جماعتِ اسلامی کے ذریعے بنگالیوں کو دبانے کی کوشش کی گئی تھی، جس نے بھارت کو مداخلت کا موقع فراہم کردیا۔ اب پھر سندھی قوم پرستوں اور جماعت اسلامی وایم کیوایم کے درمیان معرکہ برپا ہے۔ جی ایم سید کا فرزند کہتا ہے کہ1940میں لاہور کے اندر پاکستان کیلئے جو قرار داد مقاصد پیش کی گئی تھی تو70سالوں سے اس سے انحراف ہورہا ہے اور ہمارے ساتھ دھوکہ ہواہے۔ یہ قراردادمقاصد غلط تھی۔ ہم سندھی پانچ ہزار سال سے ایک الگ اور آزاد قوم ہیں اور ہم پاکستان سے آزادی کا اعلان کرتے ہیں اگر بغاوت کے مقدمے میں گرفتار کیا جاتا ہے یا گولیوں کا نشانہ بنایا جاتاہے تو ہم اس کیلئے بالکل تیار ہیں۔
پاکستان پیپلزپارٹی سندھ کا رونا روتی ہے کہ صوبے کو مرکز سے حقوق نہیں مل رہے ہیں اور ایک طرف کراچی کو حق دو اور مہاجر صوبے کی بات ہورہی ہے تو دوسری طرف سندھیوں کی طرف سے صوبہ مانگنے پر مہاجروں کے قتلِ عام کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ بلوچ سرماچاروں ، پشتون ، سرائیکی ، ہزارہ اور پنجابی قوم پرستوںکے نعرے ہیں ۔ سوشلزم کے لوگ اپنے نظرئیے اور نظام کی بات کررہے ہیں اور اسلام کی بنیاد پر کسی معاشرتی نظام اور معاشی نظام کی جگہ مولوی کے غلط فتوؤں نے لے لی ہے۔ پاکستان کو اندرونی خطرات نے گھیر رکھاہے۔

www.zarbehaq.com
www.zarbehaq.tv
https://www.youtube.com/c/Zarbehaqtv

اس پوسٹ کو شئیر کریں.

لوگوں کی راۓ

  • M. Feroze Chhipa

    Excellent News Paper

  • Bilal

    اس کتاب سے بہت سے لوگوں کے گھر جڑیں گے

  • Mustafa

    میں آپ کی رائے سے متفق ہوں۔

  • Mustafa

    بہت اچھا آرٹیکل ہے، حکومت، عدلیہ او ر ریاست کو اس پر توجہ دینی چاہئے۔

  • شباب اکرام

    حقیقت یہی ہے کہ اغیار ہمیشہ امت مسلمہ سے ہی گبھراتی ہے۔۔۔تب ہی تو سب سے امت کا مرتبہ چھین کر صرف اور صرف عوام کے درجے تک گرا دیا۔۔۔ طویل مباحثہ وقت پانے پر پیش کرونگا مگر اس بے بس عوام کیلئے صرف ایک شعر آپکی خدمت میں ان کی فطری عکاسی کیلئے عرض کونگا۔۔ خدا کو بھول گئے لوگ فکرےروزی میں غالب۔۔ تلاش رزق کی ہے رازق کا خیال تک نہیں۔۔۔۔ بہت شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

رسول اللہ ۖ ، صحابہ ، امام ابوحنیفہ ، شاہ ولی اللہ اور دار العلوم دیوبند کے سپوت کپوت تک کا سلسلہ
مذہبی جماعتوں نے کبھی پاکستان میں ایک مرتبہ بھی قرآن وسنت کے مطابق قانون سازی نہیں کی!
آواز آئی کہ تمہاری طلاق نہیں ہوئی ،قرآن کھول کردیکھ لو!