پوسٹ تلاش کریں

اتنے نکاح کئے کہ اپنے سالوں کا پتہ نہیں. مولانا طارق مسعود

اتنے نکاح کئے کہ اپنے سالوں کا پتہ نہیں. مولانا طارق مسعود اخبار: نوشتہ دیوار

itne-nikah-kie-keh-apne-saloon-ka-pata-nahi-mufti-tariq-masood

جامعۃ الرشید کے مفتی طارق مسعود سوشل میڈیا پر اپنے بیانات کی وجہ سے توجہ کا مرکز بن گیاہے اور بہت ساری ویڈیوز نیٹ پر موجود ہیں۔ ایک وڈیو میں زیادہ سے زیادہ شادیوں کی ترغیب دیکر کہاہے کہ آج کل سالے بھی جہیز میں مل جاتے ہیں۔مجھ سے کسی نے کہا کہ تمہارے کتنے سالے ہیں ؟ میں نے جواب دیا کہ اتنے سارے ہیں کہ انکا شمار نہیں کرسکتا، پتہ نہیں کون کون ہیں؟۔
نوشتۂ دیوار کے کالم نگار عبدالقدوس بلوچ نے اس پرتبصرہ کیا ہے کہ مفتی صاحب نے حلالہ کو جب کارِ ثواب قرار دیا ہے تو اس لعنت سے مشکل سے محروم ہونگے۔ حلالہ میں سالے، سالیوں کی بات تو دور کی ہے، ساس سسر کو بھی کوئی نہیں پہچانتاہے مگر یہ بہت خطرناک بات ہے اسلئے کہ حلالی والی پھر تمہاری بیگم بنتی ہے ، اسکے بچے تمہارے بچے بنتے ہیں اور وہ تمہارے بچوں کی سوتیلی ماں بنتی ہے۔ یہ کہاں سے معلوم ہوگا کہ حلالہ کروانے والی کی بچی سے کل تمہاری شادی نہ ہو؟۔ اس کی ماں سے بھی شادی جائز نہیں لیکن جب ساس کا پتہ ہی نہ ہو تویہ کہاں سے پتہ چلے گا کہ کون کس سے شادی کررہا ہے۔ مفتی طارق مسعود حلالہ کے حوالے سے اپنے بیان پر نظر ثانی کریں، اسطرح دیگر معاملات پر غور کریں، ضروری نہیں کہ فقہ کا ہرمعاملہ درست ہو ورنہ سوشل میڈیا بھی غلط ہے

اس پوسٹ کو شئیر کریں.

لوگوں کی راۓ

  • M. Feroze Chhipa

    Excellent News Paper

  • Bilal

    اس کتاب سے بہت سے لوگوں کے گھر جڑیں گے

  • Mustafa

    میں آپ کی رائے سے متفق ہوں۔

  • Mustafa

    بہت اچھا آرٹیکل ہے، حکومت، عدلیہ او ر ریاست کو اس پر توجہ دینی چاہئے۔

  • شباب اکرام

    حقیقت یہی ہے کہ اغیار ہمیشہ امت مسلمہ سے ہی گبھراتی ہے۔۔۔تب ہی تو سب سے امت کا مرتبہ چھین کر صرف اور صرف عوام کے درجے تک گرا دیا۔۔۔ طویل مباحثہ وقت پانے پر پیش کرونگا مگر اس بے بس عوام کیلئے صرف ایک شعر آپکی خدمت میں ان کی فطری عکاسی کیلئے عرض کونگا۔۔ خدا کو بھول گئے لوگ فکرےروزی میں غالب۔۔ تلاش رزق کی ہے رازق کا خیال تک نہیں۔۔۔۔ بہت شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

حضرت اُم ہانی کو اپنے مشرک شوہر سے سچی محبت تھی۔
قرآن پاک کی عظمت
امریکہ کی نصاب کتاب میں شیخ الاسلام کی خدمات کا بیان